غزل| خُم و ساغر سے نہ بادہ و پیمانے سے


خُم  و ساغر سے نہ بادہ  و پیمانے سےمحفلِ تو سجتی ہے یار کے آ جانے سےعقیدت ہے یا مجبوری، بات کوئی بھی ہوتیرا ذکر آ ہی  جاتا ہے کِسی  بہانے سےسمجھ سے با لاتر ہے یہ ماجرا محبت کاگرہیں اور بھی لگتی ہیں ، سُلجھانے سےانہی لوگوں  میں  رہتا  ہے  روز  و  شبپھر  بھی …

غزل | رات یوں رُخسار پہ تیری یاد کے آنسو مہکے


رات  یوں  رُخسار  پہ  تیری  یاد  کے  آنسو مہکےاندھیری  رات  میں  جیسے تنہا  کوئی جگنو مہکےپاکیزہ  چاندنی  سے کیسے مُعطر  ہورہی ہے فضاتیرے  پہلو کی خوشبو سے جیسے میرا پہلو مہکےتیز  ہوا   یوں   پتوں  سے  ٹکرا  کے  گزرتی  ہےاک لمبی خامشی کے بعد جیسے تیری گفتگو مہکےمیں  اور  اک  غزل  لکھ  رہا  ہوں …

غزل | پُرانے تعلق کو نئے رابطوں کی حاجت ہوئی


پُرانے   تعلق   کو    نئے   رابطوں   کی   حاجت   ہوئیدل   کو    پھر   تیری   دھڑکنوں   کی   ضرورت  ہوئیمیرے  دن   ہوئے  تیرے چہرے  کی  ضو  سے  روشننیند   تو    جیسے    تیرے   خوابوں   کی   امانت   ہوئیوہ   پت  جھڑ  تھا …

غزل | چارہ گرو میری زندگی کس رنگ میں ڈھلتی جارہی ہے


چارہ  گرو  میری  زندگی  کِس  رنگ  میں  ڈھلتی جا رہی ہےمیرا  غم   غلط   ہو رہا   ہے  کہ   اُداسی  سُلگتی  جا رہی  ہےدل     کی    ویرانیوں    سے     کہو    خاطر    جمع    رکھیں ،یونہی   خامشی  میرے  بام  و  در  پہ  بھی  اُترتی جا رہی ہےاے …

اشعار | قربت کی تیری وحشتوں نے اجاڑا میرے آشیانے کو


قربت  کی تیری وحشتوں نے اُجاڑا  میر ے آشیانے کوڈر ایسا تیری جفا نے ڈالا، ترس گئے ہم ہاتھ ملانے کوبھرے  شہ ر میں کوئی آشنا  ہی نہیں ، اور اس پر بھیہمی کو ٹھہرایا مجرمِ تنہائی، جانے کیا ہوگیا زمانے کو

غزل | خانہء دل میں یاد ِ ماضی کے خزانے جاگے


خانہء دل  میں  یاد ِ ماضی  کے خزانے جاگےپھر  تیری   یاد   آئی   پھر  درد  پُرانے  جاگےخوابیدہ تھے  کب   سے گلستاں ہاےَ  خیال میںاک  تیرے غم سے کتنے غم کے بہانے جاگےجواں      پھر       ہوئی      رُت     بہار    کیدل   میں   پھر   …