غزل| درد وہ اٹھا ہے کہ جس کا درماں نہیں کوئی


درد  وہ  اٹھا ہے  کہ جس  کا درماں نہیں کوئی
دل میں کسک  تو ہے  مگر  ارماں  نہیں کوئی
کئی بار ہوئی دل کے ویراں خانے میں دستک
خرد  نے  ہر  بار  کہا ،  جا ، یہاں نہیں کوئی
بہت   صورتیں  ہیں  یوں  تم    بن  جینے  کی
سخت  مشکل  ہے  یہ ، کہ  آساں  نہیں  کوئی

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s

Blog at WordPress.com.

Up ↑

%d bloggers like this: